پونے ضلع کے کا ٹے واڑی کے الطاف شیخ نے یو پی ایس سی امتحان میں کامیابی حاصل کرکے ایک نئی مثال قائم کی ہے۔ دیہی علاقے کے اس نوجوان کی جدوجہد مشکلات سے بھری پڑی ہے۔ گھر میں نازک صورتحال کے باوجود الطاف نے اپنے والدین کا آئی پی ایس بننے کا خواب محنت اور لگن سے سچ کیا ہے۔ وہ پہلے سنٹرل پبلک سروس کمیشن کے اسسٹنٹ کمانڈنٹ بن چکے تھے اور اب انھیں انڈین پولیس سروس کے لیے منتخب کیا گیا ہے۔

الطاف شیخ نے یو پی ایس سی سول سروسز امتحان پاس کیا ہے جس کا اعلان جمعہ کو کیا گیا تھا۔ الطاف جو کبھی سکول میں پکوڑے اور چائے بیچتا تھا اب آئی پی ایس افسر بن گیا ہے۔ وہ باراماتی تعلقہ کے پہلے آئی پی ایس افسر بن گئے ہیں۔

الطاف نے اسلام پور کے نوودیا ودیالیہ سے تعلیم حاصل کی ہے۔ بعد میں انھوں  نے فوڈ ٹیکنالوجی میں بی اے کیا۔ اس وقت وہ عثمان آباد میں انٹیلی جنس افسر کے طور پر کام کر رہے ہیں۔

آپ کو  بتاتے چلیں کہ نائب وزیر اعلیٰ اجیت پوار اور سنیترا پوار کی پہل پر نیشنلسٹ کیریئر اکیڈمی کا آغاز بارامتی میں کیا گیا تھا جس کا مقصد دیہی علاقوں کے نوجوانوں کو مسابقتی امتحانات کی تیاری میں مدد فراہم کرنا تھا۔ طلبہ کو مسابقتی امتحانات کے لیے سازگار ماحول فراہم کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ اس اکیڈمی سے ہی  تعلیم حاصل کرنے والے الطاف شیخ آج آئی پی ایس بن گئے ہیں۔ اس خبر کے آنے کے بعد کاٹے واڑی اور این سی پی کیریئر اکیڈمی میں خوشی کا ماحول ہے۔

نیشنلسٹ کیریئر اکیڈمی 2012 میں سنیترا پوار کی پہل پر قائم کی گئی تھی جس کا مقصد دیہی علاقوں کے نوجوانوں کو مسابقتی امتحانات میں مدد فراہم کرنا تھا۔ اس اکیڈمی سے اب تک 47 گزٹڈ آفیسرز بن چکے ہیں اور نوجوانوں اور خواتین کی ایک بڑی تعداد سرکاری ملازمتوں میں ملک کی خدمت کر رہی ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here