نئی دہلی : مرکزی وزیر مختار عباس نقوی نے ہندوستان میں مسلمانوں کے ساتھ نا انصافی  کرنے کے الزامات کا جواب دیا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ ‘ہندوستان مسلمانوں کے لئے جنت ہے اور جو لوگ اس ماحول کو خراب کرنے کی کوشش کر رہے ہیں وہ ہندوستانی مسلمانوں کے دوست نہیں ہوسکتے ہیں’۔ نقوی نے دراصل  میں ہندوستان کی جانب سے اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کو جواب دیا۔ دو دن پہلے  او آئی سی نے ہندوستان میں ‘اسلامو فوبیا’ کے مبینہ معاملات پر تشویش کا اظہار کیا تھا۔

او آئی سی نے کہا تھا کہ ہندوستان اپنی مسلم برادری کے حقوق کے تحفظ اور ملک میں ‘اسلامو فوبیا’ کے مقدمات کی روک تھام کے لئے فوری طور پر اقدامات’ کرے ۔ اس پر نقوی نے کہا کہ “ہم اپنا کام کر رہے ہیں۔ جب بھی وزیر اعظم کچھ  بولتے ہیں ، تو وہ 130 کروڑ ہندوستانیوں کے حقوق اور مفادات کی بات کرتے ہیں۔ اگر کوئی اسے نہیں دیکھ پارہا  ہے تو یہ ان کا مسئلہ ہے۔ نقوی نے کہا کہ “سیکولر ازم اور خیر سگالی ایک سیاسی فیشن نہیں ، بلکہ ہندوستان اور ہندوستانیوں کے لئے ایک پرفیکٹ فیشن ہے۔

اس دن او آئی سی کی جانب سے یہ بیان آیا ہے جبکہ وزیر اعظم نریندر مودی نے کورونا وائرس سے نمٹنے کے لئے کہا تھا کہ   یکتا اور بھائی چارہ  ہمارا جواب ہو نا چاہیئے ۔پی ایم مودی نے یہ بھی کہا تھا کہ یہ وائرس حملہ کر نے سے پہلے ذات،مذہب،رنگ ،زبان یا حدود نہیں دیکھتا ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here