کورونا وائرس کا انفیکشن دنیا بھر میں تیزی سے پھیل رہا ہے۔ پوری دنیا میں کورونا وائرس کے انفیکشن کے لگ بھگ دو لاکھ کیس رپورٹ ہوئے ہیں ، جبکہ 7800 سے زیادہ افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ چین میں سب سے زیادہ اموات ہوئیں۔ چین کے شہر ووہان سے شروع ہونے والے اس وائرس کے انفیکشن کے حوالے سے دنیا کے مختلف ممالک میں بہت ساری تحقیق کی جارہی ہے۔ چین کے ووہان شہر میں ، اسپتال میں داخل مریضوں کے بارے میں بہت سارے مطالعات کیے جارہے ہیں ، جب کہ سائنس داں یہاں اس وائرس کی وجہ سے ہونے والی اموات کا بھی مطالعہ کر رہے ہیں۔ اس سلسلے میں بلڈ گروپ سے متعلق ایک نئی تحقیق سامنے آئی ہے ، جس سے پتہ چلتا ہے کہ کس بلڈ گروپ کے لوگوں میں کورونا وائرس کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے اور کن لوگوں کے بلڈ گروپ کو خطرہ کم ہوتا ہے۔
کورونا وائرس کے انفیکشن سے متعلق اس تحقیق میں اہم معلومات سامنے آئی ہیں۔ دراصل ، ووہان میں ہونے والی اس تحقیق میں یہ جاننے کی کوشش کی گئی کہ کون سے بلڈگروہ میں اس وائرس کا زیادہ خطرہ ہے۔ پتہ یہ چلا کہ جن لوگوں کا بلڈ گروپ اے ہوتا ان میں کورونا انفیکشن کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے۔ جبکہ اے بلڈ گروپ کے مقابلے بلڈ گروپ ’او‘والے لوگوں میں اس کا خطرہ کم ہوتا ہے ۔
بلڈ گروپ کے بارے میں ووہان میں کی جانے والی تحقیق میں یہ بھی بتایا گیا کہ کورونا وائرس سے متاثرہ مریضوں میں سب سے زیادہ اموات بلڈ ’اے‘گروپ میں شامل افراد میں ہوئی ہیں۔ اس تحقیق میں کورونا وائرس سے متاثرہ مجموعی طور پر 2173 مریض شامل تھے ، جن میں سے 206 افراد انفیکشن کی وجہ سے ہلاک ہوگئے تھے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here