نئی دہلی : ملک بھر میں کورونا وبا کی وجہ سے تمام پرائمری اور اعلی تعلیمی ادارے بند ہیں۔  دریں اثنا ، ایم ایچ آر ڈی وزارت نئی تعلیمی پالیسی (این ای پی) کے مسودے کوحتمی  شکل دے رہی ہے ، اور اسی  ماہ کابینہ کے سامنے رکھنے کا ارادہ  بھی کر رہی ہے۔  آپ کو بتا دیں  کریں کہ نیا  تعلیمی سیشن جولائی۔ اگست کے مہینے  میں شروع ہوتا ہے ، جبکہ یو جی سی کی نئی رہنما خطوط کے مطابق اس بار اگست۔ستمبر میں تعلیمی سیشن شروع کرنے کی تجویز ہے۔  اس صورتحال میں ، ایچ آر ڈی وزارت اس سے پہلے تعلیمی پالیسی لانے کی کوشش کر رہی ہے۔

وزیر اعظم  نے لیا جائزہ

 اہم بات یہ ہے کہ ایک  مئی کو وزیر اعظم نریندر مودی نے نئی تعلیمی پالیسی کے مسودے کا جائزہ لیا۔  ایک سینئر عہدیدار کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ پارلیمنٹ میں سنسکرت یونیورسٹی کے بل پر بحث کے دوران ، NEP کے مسودے پر ارکان پارلیمنٹ تجاویز آگئی ہیں۔  وزارت نے تمام تجاویز پردھیان دیا ہے ، جس میں جنوبی ہندوستان کے ممبران پارلیمنٹ کی تجاویز شامل ہیں، پالیسی جلد ہی کابینہ میں لایا جائے گا۔

ریاستوں کو اپنی پریشانی دور ہوگی

 اسرو کے سابق سربراہ کے  کستورینگن۔ کی سربراہی میں ماہرین کے ایک پینل نے تعلیم کی پالیسی تیار کی ہے۔  اس میں بہت سے غیر ہندی ریاستوں نے پورے ملک میں ہندی کو لازمی بنانے پر تشویش کا اظہار کیا تھا ، جس میں  ہیومن ریسورس ڈویلپمنٹ نے یقین دلایا کہ  ریاستوں کی تمام پریشانیوں کو دور کیا جائے گا۔

یکسانیت پر خصوصی توجہ

 اس سے قبل ، وزیر اعظم مودی نے تعلیم کے شعبے میں اصلاحات کا جائزہ لینے کے بعد ، حکومت نے کہا تھا کہ تعلیم میں یکسانیت لانے پر توجہ دی جارہی ہے ، جس میں نئے قومی نصاب کے ڈرافٹ میں ، ملک کے ہرحصے کے طلباء کو معیاری تعلیم کے فوائد دیا جاسکتا ہے۔ ڈرافٹ میں نئے قومی نصاب فریم ورک کے ذریعے ، پرائمری تعلیم کے معیار میں بہتری، کثیر لسانی سیکھنے کا نظام، 21 ویں صدی کے جدید اسپورٹس آرٹ اور ماحولیات  امور کو فروغ دینے شامل ہیں۔

جدید تعلیم پر زور

کا بینہ کے سامنے لا نے سے پہلے اسکول اور اعلی تعلیم کے لئے جدید ٹیکنا لوجی کے استعمال اور فروغ پر تفصیل سے تبادلہ خیال کیا گیا ۔ اس میں ٹیکنا لوجی کے استعمال پر خصوصی زور دیا گیا ہے ۔ ایک افسر نے بتایا کہ لاک ڈاؤن میں آن لائن تعلیم میں سیکھے گئے اسباق کو شامل کرنے کی تجویز ایک الگ بات ہے ، وزارت اس مسودے میں حکمت عملی تیار کر رہی ہے ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here