کلکتہ: آج مغربی بنگال اردو اکادمی کے مولانا آزاد آڈیٹوریم میں کلکتہ گرلس کالج کے شعبہ اردو کے زیر اہتمام بہ اشتراک قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان بعنوان “ہندوستانی فلموں میں اردو زبان و ادب” یک روزہ ریاستی سیمینار کا انعقاد ہوا جس کے افتتاحی اجلاس کی صدارت ڈاکٹر امام اعظم نے کی جبکہ مہمانان اعزازی کے طور پر جناب ندیم الحق (ایم پی، راجیہ سبھا و صدر، گورننگ باڈی، کلکتہ گرلس کالج)، مشتاق احمد صدیقی (صدر، ملی ایجوکیشن آرگنائزیشن)، قمر الدین ملک (سرپرست، بزم افضل) شامل تھے۔ کالج کی پرنسپل ڈاکٹر ستیہ اپادھیائے جو گرچہ پروگرام میں موجود نہیں تھیں، ٹیلی کال کے ذریعہ انہوں نے سامعین کو مخاطب کرتے ہوئے سبھی مہمانان کا خیر مقدم کیا اور ہندوستانی فلموں میں اردو زبان و ادب کی اہمیت پر مختصر تقریر کی۔ جناب ندیم الحق نے اپنی افتتاحی گفتگو میں ہندوستانی فلموں میں اردو زبان کی شمولیت کو سب سے اہم قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہندوستانی فلمیں کی تدریج و اشاعت میں اردو بلاشبہ ایک اہم ترین کردار ادا کرتی ہے۔ اس خیال پر قمر الدین ملک اور مشتاق احمد صدیقی صاحبان نے بھی اپنی ہمنوائی کا اظہار کیا۔ ڈاکٹر امام اعظم نے اپنے صدارتی خطبہ میں سیمینار کے موضوع کی اہمیت کو سراہتے ہوئے فلموں میں اردو زبان کے استعمال کے متعلق اپنی پرمغز گفتگو پیش کی۔

پہلے اجلاس کی صدارت ڈاکٹر دبیر احمد(ممبر، گورننگ باڈی، کلکتہ گرلس کالج) نے کی جبکہ نقابت کے فرائض دائم محمد انصاری نے انجام دئیے۔ اس اجلاس میں چار مقالہ نگاروں ڈاکٹر رضی الدین(اسسٹنٹ پروفیسر، مغربی بنگال اسٹیٹ یونیورسٹی، باراسات)، ڈاکٹر عرشیہ اقبال (مرشد آباد)، ڈاکٹر شبھرا اپادھیائے (ایسوسی ایٹ پروفیسر، شعبہ ہندی، کھو دی رام بوس کالج) اور خورشید اختر فرازی (معروف ادیب و صحافی) شامل تھے۔ سیمینار کے دوسرے اجلاس کی صدارت ڈاکٹر زرینہ زریں(صدر، شعبہ اردو، کلکتہ یونیورسٹی) نے لی جبکہ مقالہ نگاروں میں ڈاکٹر امتیاز احمد(اسسٹنٹ پروفیسر، شعبہ اردو، کلکتہ گرلس کالج)، ڈاکٹر ومیق الارشاد القادری(سیکٹ، شعبہ اردو کلکتہ گرلس کالج)، دائم محمد انصاری(اعزازی گیسٹ لکچرر، شعبہ اردو، کلکتہ گرلس کالج)، جناب شاہد اقبال(ریسرچ اسکالر، شعبہ اردو، عالیہ یونیورسٹی)، سہیل ارشد(رانی گنج، بردوان) شامل تھے۔ جناب محمد ہارون رشید نے فلمی گیتوں کی دھن پر نغمے بکھیر کر سامعین کو لطف اندوز کیا۔ شعبہ اردو گیسٹ لکچرر ممتاز آرا کے ہدیہ تشکر سے سیمینار کا اختتام ہوا۔

پریس ریلیز

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here