شاہین باغ سے مظاہرین کو ہٹانے کی درخواست پر سپریم کورٹ میں سماعت ملتوی کردی گئی ہے۔ عدالت اب اس معاملے پر 23 مارچ کو سماعت کرے گی۔ اس سے قبل عدالت عظمیٰ نے کہا تھا  کہ اس کے ذریعہ مقرر کردہ ثالثوں کی کاوشیں ناکام ہو گئیں۔

شاہین باغ :سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ شاہین باغ سے شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) کے خلاف دھرنے پر بیٹھے لوگوں کو ہٹانے کے لئے مقرر تین ثالثوں کی کوشش ناکام ہو گئی ہے۔ آج اس کیس کی سماعت کرتے ہوئے عدالت عظمی نے کہا کہ اس معاملے کی سماعت کا صحیح وقت نہیں ہے۔ عدالت نے بغیر عبوری حکم جاری کیے کیس کی اگلی سماعت کے لئے 23 مارچ کی تاریخ طے کر دی۔ آپ کو بتا دیں  کہ شاہین باغ میں دو ماہ سے زائد عرصے سے بند روڈ کو کھولنے کے لئے دائر درخواست کی سماعت سپریم کورٹ کررہی ہے۔

آپ کو بتا دیں کہ شاہین باغ سے مظاہرین کو ہٹانے کے لئے بات چیت کرنے والے سنجے ہیگڑے ، سادھنا رام چندرن اور سابق چیف انفارمیشن کمشنر وجاہت حبیب اللہ کو ثالث مقرر کیا گیا تھا۔ عدالت نے کہا کہ مذاکرات کار کامیاب نہیں ہوئے۔

شاہین باغ کیس کی سماعت کے دوران ، سپریم کورٹ نے دہلی  تشدد پر کہا ، دہلی میں افسوس ناک واقعہ پیش آیا ہے ، جو نہیں ہونا چاہئے۔

دہلی تشدد پر تبصرہ کرتے ہوئے عدالت عظمی نے کہا کہ دہلی ہائی کورٹ اس معاملے میں سماعت کرے گی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here