شاہین باغ: شاہین باغ  سے متعلق فیصلہ پیر کو بھی نہیں لیا جاسکا۔ آج سپریم کورٹ میں سماعت کے دوران  عدالت کے مقرر کردہ دونوں مصالحت  کاروں نے ایک مہر بند لفافے میں اپنی رپورٹیں پیش کیں۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ وہ مذاکرات کاروں کی رپورٹ پر غور کرے گی۔ اس کے بعد سپریم کورٹ نے سماعت بدھ تک کے لئے ملتوی کردی۔ اب اگلی سماعت 26 فروری کو ہوگی۔

ایڈووکیٹ سادھنا رام چندرن نے جسٹس سنجے کشن کول اور جسٹس کے ایم جوزف کے بنچ کے سامنے یہ رپورٹ پیش کی۔ عدالت نے شاہین باغ میں احتجاج کرنے والے لوگوں سے بات کرنے کے لئے سینئر ایڈووکیٹ سنجے ہیگڈے سمیت سادھنا رام چندرن کو بطور مصالحت کار مقرر کیا تھا ۔

بنچ نے کہا کہ وہ رپورٹ کا جائزہ لے گی۔ عدالت اب اس کیس کی سماعت 26 فروری کو کرے گی۔ بنچ نے واضح کیا کہ بات چیت کرنے والوں کی یہ رپورٹ اس وقت مرکز اور دہلی پولیس کی نمائندگی کرنے والے درخواست گزاروں اور وکیلوں  کے ساتھ شیئر نہیں کی جائے گی۔

اس سے قبل کیس کی سماعت کے آغاز پر ، سادھنا رام چندرن نے بینچ کو بتایا کہ وہ مذاکرات کی ذمہ داری دینے پر عدالت کے شکر گزار ہیں اور بات چیت کرنے والوں سے بہت کچھ سیکھنے کا موقع تھا جو مثبت تھا ۔ ہم بدھ کے روز اس معاملے کی سماعت کریں گے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here