کولمبو : سری لنکا کی پارلیمانی کمیٹی نے برقعے پر فوری پابندی کی تجویز پیش کی ہے۔ اسی کمیٹی نے نسلی اور مذہبی بنیادوں پر مبنی سیاسی جماعتوں کی رجسٹریشن معطل کرنے کی بھی تجویز پیش کی ہے۔

دراصل سری لنکا کی قومی سلامتی سے متعلق کمیٹی نے گذشتہ سال 21 اپریل کو ایسٹر کے موقع پر ہونے والے دہشت گردانہ حملوں کا حوالہ دیتے ہوئے اس کی تجویز پیش کی ۔ اس حملے میں 250 سے زیادہ افراد مارے گئے تھے۔

روزنامہ ‘ڈیلی مرر’ کے ایک خصوصی رپورٹ کے مطابق ، جمعرات کو پارلیمنٹ میں پیش کردہ اس تجویز میں ایسٹر حملوں کے بعد 14 متنازعہ معاملات کو حل کرنے کی بات کی گئی ہے۔ رپورٹ کے مطابق متعدد ممالک نے پہلے ہی برقعے پر پابندی عائد کر چکی  ہے۔ اس نے تجویز پیش کی ہے  کہ پولیس کو عوامی مقامات پر کسی شخص کی شناخت کرنے کا حق حاصل ہونا چاہئے اور ان سے اپنا چہرہ ظاہر کرنے کو کہا جائے تو اعتراض نہ کیا جائے ۔

اس رپورٹ میں مسلم مذہبی اور ثقافتی امور کے شعبہ کے تحت مدرسوں کو چلانے کے لئے خصوصی کمیٹی تشکیل دینے کی بھی تجویز پیش کی گئی ہے۔ اہم بات یہ ہے کہ ایسٹر  میں اتوار کے روز دہشت گرد حملے میں  نو خودکش بمباروں نے تین گرجا گھروں اور تین عالیشان  ہوٹلوں کو نشانہ بنایا تھا  ، جس میں 11 ہندوستانیوں سمیت 258 افراد ہلاک ہوگئے تھے ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here