اکھلیش یادو اسمبلی کے سامنے دھرنے پر بیٹھے ہیں۔ اکھلیش کا کہنا ہے کہ حکومت کو اس واقعے کی ذمہ داری لینی چاہئے

لکھنؤ: سماجوادی پارٹی کے قومی صدر اکھلیش یادو نے اناؤ کانڈ کو لے کر محاذ کھول دیا ہے۔ اکھلیش اسمبلی کے سامنے دھرنے پر بیٹھے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو متاثرہ  کو جلانے کے واقعے کی ذمہ داری قبول کرنی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست کی یوگی حکومت کو استعفی دینا چاہئے۔ اکھلیش کے ساتھ پارٹی کے تمام کارکنان بھی وہاں موجود ہیں۔

اکھلیش نے کہا کہ اناؤ واقعہ خوفناک ہے۔ بی جے پی حکومت میں یہ پہلا واقعہ نہیں ہے۔ لاکھ کوششوں کے بعد بھی اس بیٹی کو نہیں بچایا جاسکا۔ اکھلیش نے اس سے قبل بھی  اناو میں پیش آنے والے واقعہ کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ جرم کا الزام بی جے پی سے وابستہ لوگوں پر ہے ، لہذا بیٹی کو انصاف نہیں مل رہا ہے۔

اکھلیش نے کہا کہ بی جے پی حکومت امن و امان کا نعرہ لگاتی رہتی ہے ، لیکن بیٹی کی جان نہیں بچاسکی۔ حکومت بھی اس کی موت کی ذمہ دار ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی حکومت میں بیٹیاں انصاف کا مطالبہ کررہی ہیں۔

پرینکا گاندھی خاندان سے ملنے اناؤ پہونچیں

پرینکا گاندھی کے ساتھ  کانگریس کے سینئر لیڈر پرمود تیواری اور ریاستی صدر اجے سنگھ بھی نظر آ ئے۔ پرینکا گھر کے اندر خاندان سے ملنے گئی ہیں۔ وہ نجی طور پر کنبہ سے مل کر یہ جاننا  چا ہتی ہیں  کہ خاندان اب کیا چاہتا ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here