نئی دہلی : کرونا وائرس آہستہ آہستہ پوری دنیا میں بحث کا موضوع بن گیا ہے۔ ممبئی میں بھی کرونا وائرس کے دو مشتبہ واقعات سامنے آئے ہیں۔ دونوں افراد  کو کستوربا اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ اس وقت ، ان کی جانچ کی جا رہی ہے۔ ادھر ، چین میں کورونا وائرس کے باعث 26 افراد کی موت ہوچکی ہے ، جبکہ 830 افراد اس میں مبتلا ہیں۔ آئیے جانتے ہیں کہ کورونا کیا ہے اور کس طرح حفاظت کریں۔

دراصل ، ہندوستانی وزارت صحت نے احتیاطی طور پر تھرمل اسکینر کے طور پر دہلی ، ممبئی اور کولکتہ کے ہوائی اڈوں پر چین سے آنے والے بین الاقوامی سیاحوں کی جانچ کے لئے ہدایات دی ہیں۔ طیاروں سے متعلق اس سلسلے میں اعلانات بھی کیے جارہے ہیں۔ چین جانے اور آ نے والے مسافروں کے لئے کونسلنگ جاری کی گئی ہے۔ عالمی ادارہ صحت نے کہا ہے کہ عالمی صحت ایمرجنسی کے اعلان پر جلد ہی فیصلہ لیا جائے گا۔ کیونکہ اس طرح کے اعلان سے کرونا وائرس کے پھیلنے سے نمٹنے کے لئے بین الاقوامی کوششیں تیز ہوجائیں گی۔

کورونا وائرس کیا ہے؟

کرونا وائرس ،وائرس کے کنبے سے ہے۔ یہ وائرس اونٹوں ، بلیوں اور چمگادڑوں سمیت بہت سے جانوروں میں بھی داخل ہورہا ہے۔ عالمی ادارہ صحت کے مطابق ، کورونا وائرس سی فوڈ سے منسلک ہے۔

اس کی علامات کیا ہیں؟

ابتدائی علامات جیسے سردی ، کھانسی ، گلے کی سوزش ، سانس لینے میں دشواری ، بخار کورونا وائرس کے مریضوں میں دیکھا جاتا ہے۔ اس کے بعد ، یہ علامات نمونیہ میں بدل جاتے ہیں اور گردوں کو نقصان پہنچاتے ہیں۔ پھیپھڑوں میں شدید قسم کا انفیکشن پایا جاتا ہے۔

اس وائرس سے چھٹکارا پانے کے لئے ابھی تک کوئی ویکسین تیار نہیں کی گئی ہے۔ لیکن اس کی علامات کی بنیاد پر ، ڈاکٹر اس کے علاج میں دوسری ضروری دوائیں استعمال کر رہے ہیں۔ تاہم ، اب اس کی دوا بھی دریافت کی جارہی ہے۔

یہ حفاظتی اقدامات ہیں

اپنے ہاتھوں کو صابن اور پانی سے صاف کریں۔

کھانسی اور چھینک آنے پر اپنی ناک اور منہ کو ٹشو یا مڑی ہوئی کہنی سے ڈھانپیں۔

ایسے لوگوں سے قریبی رابطے کرنے سے گریز کریں جن کو سردی یا فلو جیسی علامات ہیں۔ اس کے علاوہ کھانا اچھی طرح سے پکائیں ، گوشت اور انڈے پکا کر ہی کھائیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here