جواہر لال نہرو یونیورسٹی میں  ہاسٹل کی فیس میں اضافے کو لے کر  طلباء مظاہرہ کر رہے ہیں  ۔ جے این یو کیمپس میں اب پیرا ملٹری فورس تعینات کردی گئی ہے۔

نئی دہلی : جواہر لال نہرو یونیورسٹی میں  ہاسٹل کی فیس میں اضافے کو لے کر  طلباء کا مظاہرہ جاری ہے۔ جے این یو کیمپس میں اب پیرا ملٹری فورس تعینات کردی گئی ہے۔ گذشتہ کئی روز سے طلباء ہاسٹل کی فیس میں اضافے کے خلاف احتجاج کر رہے  ہیں۔ خاص بات یہ ہے کہ اس احتجاج  میں اکھل بھارتیہ ودیارتھی پریشد (اے بی وی پی) بھی شامل ہے۔ تاہم ، جے این یو انتظامیہ کا کہنا ہے کہ جس کے  لئے  احتجاج کر رہے ہیں  وہ 14 سالوں سے نافذ ہے۔

طلبہ یونین  کا مطالبہ ہے کہ ہاسٹل کا مینول  اور فیس میں اضافے کا آرڈر واپس لیا جائے۔ جے این یو میں اے بی وی پی یونٹ کے وزیر منیش جانگڈ کا کہنا ہے کہ انہیں اس احتجاج میں جے این یو اسٹوڈنٹس یونین سمیت تمام طلبہ کی حمایت حاصل ہے۔

جے این یو میں طلبہ کا احتجاج۔ ٖفوٹو:رکن الدین

اس کے ساتھ ، انہوں نے یہ بھی کہا کہ یہ لڑائی نظریاتی اختلافات کے بارے میں نہیں ہے ، لہذا اس میں تمام طلباء جے این یو انتظامیہ کے خلاف مل کر لڑ رہے ہیں۔ اے بی وی پی نے اعلان کیا ہے کہ فیسوں میں اضافے اور ہاسٹل کا نیا مینول  واپس نہ ہونے تک ان کی لڑائی جاری رہے گی۔

اے بی وی پی کے احتجاج  کے دوران سی آر پی ایف کے اہلکار جے این یو کیمپس میں بھی بلا لئے  گئے ہیں ۔ اس پر طلبہ تنظیم کا کہنا ہے کہ انتظامیہ طلبا کو ان کے مطالبات تسلیم کرنے کے بجائے جیل میں ڈالنا چاہتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ کیمپس میں سی آر پی ایف کے اہلکار تعینات کردیئے گئے ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here