جیوتیرا دتیہ سندھیا کو بی جے پی میں کیا وہ  اعزاز ملے گا جس کے لئے وہ کانگریس میں جدوجہد کررہے تھے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ بی جے پی سندھیا کو راجیہ سبھا بھیج سکتی ہے۔ اس کے علاوہ انہیں مودی سرکار میں وزیر بھی بنایا جا سکتا ہے ۔

بھوپال : مدھیہ پردیش میں سیاسی گھمسان ​​کے درمیان کانگریس کے ناراض لیڈر جیوتیرادتیہ سندھیا نے منگل کے روز وزیر اعظم نریندر مودی اور وزیر داخلہ امت شاہ سے ملاقات کرنے کے بعد کانگریس سے استعفی دینے کا اعلان کر دیا۔ سندھیا آج شام 6 بجے بھارتیہ جنتا پارٹی میں شامل ہونے جارہے ہیں۔

جیوتیرادتیہ سندھیا کو بھی بی جے پی میں کیا وہ  اعزاز ملے گا جس کے لئے وہ کانگریس میں جدوجہد کررہے تھے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ بی جے پی سندھیا کو راجیہ سبھا بھیج سکتی ہے۔ اس کے علاوہ انہیں مودی سرکار میں وزیر بھی بنایا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق پارلیمنٹ اجلاس کے بعد مودی کابینہ میں توسیع کی جائے گی اور اس توسیع میں سندھیا کو بھی شامل کیا جائے گا۔ مدھیہ پردیش میں کانگریس کی حکومت کا تختہ الٹنے کے لئے  سندھیا کو یہ انعام دیا جانا ہے۔

دراصل ، جیوتیرادتیہ سندھیا کیمپ کے ایم ایل اے بھی کانگریس سے ناراض ہیں۔ ایسے ہی  19 ممبران اسمبلی نے استعفی دے دیا ہے۔ ان اراکین اسمبلی کے استعفے کے ساتھ ہی  کمل ناتھ حکومت کا زوال تقریبا یقینی سمجھا جارہا  ہے اور بی جے پی ایک بار پھر مدھیہ پردیش میں حکومت بنانے کی پوزیشن میں ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here