ممبئی : مہاراشٹر میں فلور ٹیسٹ سے ایک دن پہلے ہی وزیر اعلی دیویندر فڈنویس اور نائب وزیر اعلی اجیت پوار نے ایک گھنٹے کے اندر ہی اپنےعہدے سے استعفیٰ دے دیا۔ دونوں نے ہفتہ کی صبح گورنر بھگت سنگھ کوشیاری کی موجودگی میں 4 دن قبل راج بھون میں اپنے عہدے کا حلف لیا تھا۔ فڈنویس نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ میں گورنر کو استعفیٰ دینے جارہا ہوں ۔انہوں نے کہا کہ مہاراشٹرا نے بی جے پی کو سب سے بڑا مینڈیٹ دیا۔ ہمیں 70اور شیوسینا کو 40فیصد نشستیں ملی ہیں۔ شیو سینا  نے سودے بازی شروع کردی۔ ہم نے صاف کہا تھا کہ جو فیصلہ نہیں ہوا تھا،اس پر اصرار نہ کریں۔ فڈنویس نے کہا کہ تین پہیوں والی حکومت اپنے بوجھ تلے دبے گی۔

اس سے قبل منگل کی صبح ، سپریم کورٹ نے مہاراشٹر کیس میں اپنا فیصلہ سنایا اور اراکین اسمبلی کو بدھ کی شام 5 بجے تک حلف اٹھانے اور پھر فلور ٹیسٹ کروانے کا حکم دیا تھا ۔ اس کے بعد وزیر اعظم نریندر مودی ، بی جے پی صدر امت شاہ اور ایگزیکٹو چیئرمین جے پی نڈا نے ملاقات کی۔ اس ملاقات کے 2 گھنٹوں کے اندر ہی ، فڈنویس اور اجیت نے استعفیٰ دینے کا اعلان کیا۔

سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد این سی پی ، کانگریس اور شیوسینا کی بھی ملاقات ہوئی ، جس میں شام 5 بجے اتحاد کے قائد کا انتخاب کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ کانگریس نے بالا صاحب تھوراٹ کی بطور پروٹیم اسپیکر کی تقرری کا مطالبہ کیا ہے۔ کانگریس نے کہا کہ وہ اسمبلی میں سب سے سینئر رہنما ہیں۔ تھوراٹ 8 بار کے ایم ایل اے ہیں۔ تھوراٹ کو کانگریس قانون ساز پارٹی کا قائد بھی منتخب کیا گیا ہے۔ این سی پی نے جینت پاٹل کو قانون ساز پارٹی کا قائد منتخب کیا ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here