نئی دہلی : جمعیت علمائے ہند نے ایودھیا کیس میں سنائے گئے فیصلے پر سپریم کورٹ میں نظرثانی کی درخواست دائر کردی ہے۔ اطلاعات کے مطابق  یہ عرضی جمعیت کے اترپردیش کے جنرل سکریٹری مولانا اشہد رشیدی کی طرف سے دائر کی گئی ہے ، جو ایودھیا کیس میں مسلم فریق کے 10 درخواست گزاروں میں سے ایک ہیں۔ بتایا جارہا ہے کہ جمعیت کے سربراہ مولانا ارشد مدنی شام 5 بجے پریس کانفرنس کریں گے۔

حالانکہ  آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے سکریٹری ظفریاب جیلانی نے کہا کہ آج (ایودھیا کیس میں) سپریم کورٹ کے سامنے نظرثانی کی درخواست داخل نہیں کریں گے۔ انھوں نے کہا کہ نظرثانی کی درخواست تیار کر لی  ہے اور اس کو 9 دسمبر سے پہلے کسی بھی دن داخل کرسکتے ہیں۔

آپ کو بتا دیں  کہ 14 نومبر کو جمعیت کی ایگزیکٹو کمیٹی نے پانچ ممبروں پر مشتمل ایک پینل تشکیل دیا  تھا جس میں قانونی ماہرین اور مذہبی امور کے اسکالرز شامل تھے۔ یہ کمیٹی سپریم کورٹ کے 9 نومبر کے فیصلے کے ہر پہلو کو دیکھنے کے لئے تشکیل دی گئی تھی۔

جمعیت کے سربراہ مولانا ارشد مدنی کی سربراہی میں بننے والے اس پینل نے سپریم کورٹ کے فیصلے کو چیلنج کرنے والی نظرثانی کی پٹیشن کے امکانات کو دیکھا اور سفارش کی کہ اس معاملے میں نظرثانی درخواست دائر کی جائے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here